تازہ ترین
outline

ہر گھنٹے بعد ایک طالب علم خودکشی کر لیتا ہے، وجہ کیا ہے؟

سترہ سالہ طالب علم کرن ویر فزکس کے پیپر میں خراب کارکردگی کی وجہ سے پریشان تھا، امتحان دینے کے کچھ گھنٹوں بعد ہی اس کی لاش چھت کے پنکھے سے لٹکتی ہوئی ملی۔

یہ افسوسناک واقعہ بھارتی شہر موہالی میں پیش آیا۔

خود کشی سے پہلے کرن ویر نے اپنے والدین کے نام ایک خط لکھا تھا کہ میں بہت شرمندہ ہوں کہ آپ کی امیدوں پر پورا نہیں اتر سکا اور آپ کی خواہشات کو پورا نہیں کرسکا۔ میں اپنے دادا دادی سے بہت پیار کرتا ہوں، برائے مہربانی آپ ان کا بہت خیال رکھیے گا۔

بھارت میں خود کشی کرنے والے طالب علموں کی شرح میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔

Image result for student suicide

نیشنل کرائم رپورٹس بیورو 2015کی رپورٹ کے مطابق بھارت میں ہر گھنٹے میں ایک طالب علم خود کشی کرتا ہے۔

اعدادو شمار کے مطابق 2007 سے 2016 تک کم وبیش 75ہزار طالب علم خود کشی کر چکے ہیں۔

پورے ملک کے طالب علم اس وقت نویں اور دسویں جماعت کے امتحانات دینے میں مصروف ہیں اور یہ مرحلہ ہر طالب علم کے لیے ذہنی دباؤ کا سبب ہوتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*