outline

جینز پہننے والی لڑکیاں ماں بننےپر ٹرانس جینڈر بچوں کو جنم دیتی ہیں، پروفیسر کے بیان پر احتجاج

بھارت میں خواتین سے متعلق جہاں جنسی زیادتیوں کے افسوسناک واقعات کی خبریں تواتر سے آتی ہیں وہیں خواتین سے متعلق ایسے بیانات بھی سامنے آتے ہیں جو سراسر خواتین کے حقوق کے منافی ہوتے ہیں۔

Women who wear jeans give birth to transgenders: Kerala professor's shocker

بھارتی ریاست کیرالہ میں ایک پروفیسر کو اپنے اس بیان کے بعد شدید تنقید کا سامنا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ جینز پہننے والی لڑکیاں جب ماں بنتی ہیں تو ٹرانس جینڈر بچوں کو جنم دیتی ہیں۔

Image result for indian girls in jeans

انڈین ایکسپریس کے مطابق باٹنی کے پروفیسر رجت کمار نے ایک میٹنگ کے دوران کہا کہ جو لڑکیاں مردوں کی طرح کا لباس (جینز اور شرٹ) پہنتی ہیں ان کے بچے ٹرانس جینڈر پیدا ہوتے ہیں۔ انہوں اعدادوشمار دیتے ہوئے کہا کہ پہلے ہی ریاست کیرالہ میں 6 لاکھ ٹرانس جینڈر موجود ہیں۔

Image result for indian female students in jeans

پروفیسر رجت کمار کے مطابق صرف انہی جوڑوں کے بچے صیحیح سلامت پیدا ہوتے ہیں جو اپنی طرز زندگی میں صنف مخالف کی پیروی نہیں کرتے، یعنی مرد عورتوں کی طرح اور عورتیں مردوں کی طرح لباس نہیں پہنتی۔

پروفیسر نے مزید کہا کہ ایسے والدین جو مشکوک کردار کے ہوں ان کے بچے دماغی فالج کا شکار ہو جاتے ہیں۔

ریاستی حکام نے مذکورہ پروفیسر کے خلاف قانونی ایکشن لیتے ہوئے اسے سکولوں اور کالجوں میں سرکاری سپونسرڈ لیکچر دینے سے روک دیا ہے۔ کیرالہ کے وزیر صحت نے ایک بیان میں کہا کہ پروفیسر کمار نے اپنا بیان واپس نہیں اس لیے ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے گی۔

یاد رہے کہ چند ہفتے قبل کیرالہ ہی کے ایک خواتین کالج میں ایک پروفیسر نے مبینہ طور طالبات کے پستانوں کو تربوز سے تشبیہہ دی تھی جس کےخلاف خواتین نے تربوز اٹھا کر سڑکوں پر احتجاج کیا تھا۔ بعد ازاں مذکورہ پروفیسر کو عہدے سے ہاتھ دھونے پڑے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*