outline

سعودی عرب کی تاریخ میں خواتین کی پہلی میراتھن ریس، جانیے فاتح کون رہا؟

جدہ (ویب ڈیسک) سعودی عرب ان دنوں جدیدیت کی طرف گامزن ہے جس کا سہرا موجودہ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے سر جاتا ہے، سعودی خواتین کو حقوق دیے جا رہے ہیں، اب خبر آ رہی ہے کہ سعودی عرب کی تاریخ میں پہلی بار خواتین کی میراتھن ریس کا مقابلہ منعقد کیا گیا۔

’الحسا چل پڑا‘ کے نام سے ہونے والی اس میراتھن میں پہلی پوزیشن سعودی عرب کی 28 سالہ مزنہ النصار نے حاصل کی جب کہ مجموعی طور پر اس ریس میں 3 کلومیٹر تک 1500 خواتین نے حصہ لیا۔

سعودی عرب کی مزنہ النصار نے صرف 15 منٹ میں یہ دوڑ مکمل کرکے امریکا کی آنڈا جویس اور تائیوان کی سانگ سونگ پر سبقت حاصل کرلی۔ بالترتیب دوسری پوزیشن امریکی اور تیسری تائیوان کی خاتون نے حاصل کی۔

سعودی عرب میں ہونے والے اس میراتھن مقابلے کو الاحساء گورنری، موسیٰ اسپتال اور دیگر اداروں کی معاونت حاصل رہی۔ خواتین کے لیے میراتھن مقابلے کے شرعی ضوابط متعین کیے تھے تھے۔ مقابلے میں شریک تمام خواتین کے لیے پردہ کو لازمی قرار دیا گیا تھا۔

میراتھن کی انتظامی کمیٹی نے چند گھنٹے کے دوران حصہ لینے کی خواہش مند خواتین کی رجسٹریشن مکمل کرلی تھی۔ محض چند گھنٹوں کے دوران 2000 خواتین نے اپنے نام درج کرائے تھے۔


میراتھن مقابلے کی نگرانی مالک الموسیٰ نے کی۔ ان کا کہنا تھا کہ میراتھن جیسی صحت مند سرگرمی سے معاشرے میں پائی جانے والی گھٹن کو ختم کرنے میں مدد ملے گی۔

سعودی عرب میں 24 فروری کو دارالحکومت الریاض میں مردوں کی پہلی بین الاقوامی میراتھن کرائی گئی تھی ۔اس کے ساتھ ساتھ سعودی عرب نے اعلامیہ جاری کیا ہے کہ خواتین کی میراتھن بھی آئندہ ہفتے کروائی جائے گی ۔ جدہ رننگ ٹیم کی انچارج نسرین غنیم نے مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا ہے کہ آئندہ ہفتے جدہ شہر کے الجوہرہ اسٹیڈیم میں پہلی لیڈیز میراتھن منعقد ہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*