تازہ ترین
outline

سنچورین ٹیسٹ کا فیصلہ کن روز، پاکستان کو جیت کے لیئے 10 وکٹیں،جنوبی افریقہ کو 149 رنز درکار

سنچورین ٹیسٹ میں مدمقابل پاکستان اور جنوبی افریقہ کی ٹیموں کے لیئے آج فیصلہ کن دن ہے کیونکہ گزشتہ دو دن کے کھیل کو دیکھتے ہوئے توقع کی جا رہی ہے کہ آج کا دن فیصلہ کن ثابت ہو گا

سنچورین ٹیسٹ جیتنے کے لیئے 149 رنز جبکہ پاکستان کو 10 وکٹیں درکار ہیں اور آج میچ کا تیسرا دن ہے

پچ خراب ہونے کے باعث ٹیسٹ کا دوسرا دن بھی بولرز کے نام رہا اور پہلے دن کی طرح دوسرے روز بھی 15 وکٹیں گریں۔

پاکستانی ٹیم دوسری اننگز میں 190 رنز پر آؤٹ ہوئی جب کہ جنوبی افریقا کی ٹیم بھی 223 رنز بناسکی تھی۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ اس ٹیسٹ میچ کے دوران دو دن میں 30 وکٹیں گرگئیں اور پاکستانی اننگز ہو یاپھر میزبان ٹیم کی بلے بازی ،کوئی بھی جم کر نہ کھیل سکا

پاکستان اور جنوبی افریقہ کے درمیان سینچورین میں جاری پہلے ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن میزبان ٹیم نے اپنی دوسری اننگز کا 127 رنز پانچ کھلاڑی آؤٹ سے دوبارہ آغاز کیا تو ڈیل سٹین اور باووما نے چھٹی وکٹ کی شراکت میں 36 رنز بنائے۔

باووما نے اہم 53 رنز کی اننگز کھیلی جنھیں شاہین شاہ آفریدی نے آؤٹ کیا۔ ان کے بعد جنوبی افریقہ کے دوسرے کامیاب بلے باز کوئنٹن ڈی کاک رہے جنھوں نے 45 رنز کی اننگز کھیلی اور اپنی ٹیم کو پہلی اننگز میں 42 رنز کی برتری دلا دی۔

تاہم پاکستانی بولرز وقفے وقفے سے وکٹیں لیتے رہے اور جنوبی افریقہ کی پہلی اننگز کو 223 رنز پر سمیٹ دیا۔ پاکستان کی جانب سے نوجوان بولر شاہین شاہ آفریدی اور ٹیم میں واپسی کرنے والے محمد عامر نے چار، چار وکٹیں لیں۔

پھر پاکستان نے اپنی دوسری اننگز کا آغاز کیا اور دونوں اوپنرز فخر زمان اور امام الحق نے انتہائی عمدہ انداز میں بلے بازی کرتے ہوئے جنوبی افریقہ کی 42 رنز کی برتری کو ختم کر دیا۔ تاہم یہ سلسلہ زیادہ دیر نہ چل سکا اور صرف دو رنز کی برتری حاصل کرتے ہی فخر زمان ایک جارحانہ شاٹ کھیلتے ہوئے آؤٹ ہوگئے۔

اس کے بعد کریز پر شان مسعود آئے جنھوں نے امام الحق کا بھرپور ساتھ دیا اور دونوں بلے بازوں نے دوسری وکٹ کی شراکت میں 57 رنز بنائے اور چائے کے وقفے تک کریز پر جمے رہے۔ اس وقت ایسا لگ رہا تھا کہ پاکستان ایک بڑا ہدف دینے میں کامیاب ہو جائے گا لیکن وقفے کے فوراً بعد ہی امام الحق 57 رنز بنا کر اولیوئر کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔

اس کے بعد کیا تھا پاکستان کی بیٹنگ لائن اپ یک دم سے للکھڑا گئی اور یکے بعد دیگرے وکٹیں گرتی رہیں۔ اظہر علی اور کپتان سرفراز احمد صفر صفر، اسد شفیق اور بابر اعظم چھ، چھ رنز بنا کر چلتے بنے۔ واضح رہے کہ سینچورین ٹیسٹ کے ابتدائی دو دنوں میں کل 30 وکٹیں گری ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*