تازہ ترین
outline

زینب کے قاتل کی گرفتاری کے بعد مردان کی عاصمہ سے متعلق بھی اہم خبر آگئی

مردان (نمائندہ آؤٹ لائن) قصور کی زینب کے قاتل کی گرفتاری کے بعد مردان کی عاصمہ کے قتل کیس سے متعلق بھی اہم خبر سامنے آگئی۔

17 جنوری کو مردان کے ضلعی ناظم نے دعویٰ کیا تھا کہ 2 روز قبل یعنی 15 جنوری کو قتل کرکے کھیتوں میں پھینکی گئی 4 سالہ بچی عاصمہ کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا، پوسٹمارٹم رپورٹ میں اس بات کی تصدیق ہوئی، تاہم ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر (ڈی پی او) مردان میاں سعید نے کہا تھا کہ بچی کی موت گلا گھونٹنے سے ہوئی ہے اور پوسٹمارٹم رپورٹ میں زیادتی کی کوئی نشاندہی نہیں کی گئی۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے بھی عاصمہ کے والدین سے ملاقات کرکے ملزمان کی جلد گرفتاری کی یقین دہانی کرائی تھی۔

خیبرپختونخوا پولیس اب تک عاصمہ کے قاتلوں کو گرفتار نہیں کرسکی ہے اور اس حوالے سے صرف زبانی جمع خرچ کیا جارہا ہے۔تاہم اب اس حوالے سے یہ اہم خبر سامنے آئی ہے کہ پولیس نے عاصمہ قتل کیس میں تحقیقات کے لیے علاقے کے تمام افرادکا ڈیٹا حاصل کرلیااورگزشتہ روز 200 افراد کے ڈی این اے کے نمونے حاصل کیے گئے ہیں،مشتبہ افراد کے پولی گرافک ٹیسٹ بھی کیے جارہے ہیں۔

واضح رہے کہ قصور میں زیادتی کے بعد قتل ہونے والی زینب کے قاتل عمران نقشبندی کی گرفتاری کے بعد خیبرپختونخوا پولیس کو تنقید کا سامنا تھا کہ وہ ابھی تک عاصمہ کے قاتلوں کو گرفتار کیوں نہیں کرسکی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*