outline

پاکستان سے رہا ہونے والے مُلا عبدالغنی برادر طالبان سیاسی دفتر کے سربراہ مقرر

افغان طالبان کے اہم کمانڈر مُلا عبدالغنی برادر جنہیں پاکستان نے سیاسی اور مفاہمتی عمل کو آگے بڑھانے کے لیئے گزشتہ برس رہا کیا تھا ،انہیں افغان طالبان کے قطر میں سیاسی دفتر کا سربراہ مقرر کر دیا گیا ہے یعنی مفاہمتی عمل کو آگے بڑھانا اب ان کی ذمہ داری ہوگی

مُلا عبدالغنی برادر کو مذاکراتی عمل کا سربراہ بنائے جانے کی خبر بین الاقوامی خبررساں اداروں نے بھی جاری کی ہے جبکہ افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر ایک ٹویٹ کے ذریعے بھی اس خبر کی تصدیق کی ہے

یہ اطلاعات بھی موصول ہوئی ہیں کہ نئی ذمہ داریاں تفویض ہونے کے بعد ملا عبدالغنی برادر قطر پہنچ گئے ہیں اور جلد امریکہ سے مذاکرات کے نئے دور کا آغاز ہوگا

ملا عبدالغنی برادر کا شمار تحریک طالبان کے بانی ارکان میں ہوتا ہے انہوں نے ملا عمر کے ساتھ مل کر تحریک طالبان کی بنیاد رکھی اور طالبان حکومت کا بھی حصہ رہے

ملا عبدالغنی برادر کو فروری 2010 میں کراچی میں ہونے والے ایک آپریشن کے دوران گرفتار کیا گیا تھا مگر جب زلمے خلیل زاد نے پاکستانی حکام کے سے ملاقات کے دوران چند طالبان کمانڈرز کو رہا کرنے کا مطالبہ کیا تاکہ مفاہمتی عمل کو آگے بڑھایا جا سکے تو آٹھ سالہ حراست کے بعد گزشتہ برس اکتوبر میں انہیں رہا کر دیا گیا

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*