outline
fakhar crickter

پاکستان کا سیریز میں کلین سویپ ،آخری ون ڈے میں زمبابوے کو 131 رنز سے شکست

زمبابوے کے شہر بلاویو میں کھیلے جانے والی ایک روزہ میچوں کی سیریز کے پانچویں اور آخری میچ میں پاکستان نے زمبابوے کو 131 رنز سے شکست دے کر کلین سویپ کر دیا ہے۔

پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور جارحانہ بیٹنگ سے اننگز 364 رنز پر ختم کی ہے۔

اس نے جواب میں زمبابوے کی ٹیم مقررہ 50 اوورز میں چار وکٹوں نے نقصان پر 234 رنز بنا سکی۔

فخر زمان کو مین آف دی سیریز جبکہ بابر اعظم کو مین آف دی میچ کا ایوارڈ دیا گیا ہے۔

پاکستان کی جانب سے امام الحق نے 110 رنز اور بابر اعظم نے ناقابل شکست 106 رنز بنائے جبکہ فخر زمان نے 85 رنز بنائے۔

اننگز کا جب آغاز ہوا تو پاکستان کے اووپنر فخر زمان کو صرف 20 رنز درکار تھے تاکہ وہ ایک روزہ میچوں میں تیز ترین ہزار رنز بنانے کا ریکارڈ قائم کر سکیں اور انھوں نے باآسانی اپنے 18ویں میچ میں یہ ریکارڈ بنا لیا۔

اوپننگ بلے باز فخرزمان اور امام الحق نے اننگز کا آغاز کیا اور پُراعتماد بلے بازی کرتے ہوئے پہلی وکٹ پر 168 رنز کی شراکت قائم کی۔

فخر زمان 85 رنز بناکر آؤٹ ہوئے، انہوں نے اپنی اننگز میں ایک چھکا اور 10 چوکے بھی لگائے، گرین شرٹس کے دوسرے آؤٹ ہونے والے بلے باز امام الحق تھے جنہوں نے شاندار کھیل پیش کرتے ہوئے اپنے کیرئیر کی چوتھی سنچری اسکور کی اور 110 رنز بناکر آؤٹ ہوئے، ان کی اننگز میں ایک چھکا اور 8 چوکے بھی شامل تھے۔

پاکستان کی جانب سے بابراعظم نے بھی جارحانہ انداز اپنایا اور 76 گیندوں پر 2 چھکوں اور 9 چوکوں کی مدد سے 106 رنز ناٹ آؤٹ اننگز کھیلی، شعیب ملک اور آصف علی 18،18 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

زمبابوے کے بولرز ایک مرتبہ پھر بے بسی کی تصویر بنے رہے اور کوئی بھی بولر متاثر کن کارکردگی دکھانے میں ناکام رہا۔

کرسٹوفر مپوفو، ٹینڈائی چٹارا، لائم روچی اور ویلنگٹن مساکاڈزا نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔

ہدف کے تعاقب میں زمبابوے کے بلے بازوں کی گزشتہ میچز کے مقابلے میں کارکردگی بہتر رہی اور اوپنرز کی جانب سے 66 رنز کا آغاز فراہم کیا گیا۔

تاہم اننگز کے کسی لمحے بھی زمبابوے ہدف کی جانب گامزن نظر نہیں آئی۔ رائن مرے 47، پیٹر مور 44 اور پرنس مسوری 39 رنز کے ساتھ نمایاں رہے۔

پاکستان کی جانب سے محمد نواز اور حسن علی نے دو، دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

فخر زمان نے آج ایک مرتبہ پھر عالمی ریکارڈز بنائے، انہوں نے 20 رنز مکمل کرنے کے ساتھ ہی ایک روزہ کرکٹ میں تیز ترین ایک ہزار رنز بنانے والے پہلے کھلاڑی بن گئے۔

فخر زمان نے یہ کارنامہ 18 میچز میں انجام دیا جب کہ اس سے قبل یہ اعزاز ویسٹ انڈیز کے سابق مایہ ناز بلے باز سر ویون رچرڈ کے پاس تھا، انہوں نے 21 میچز میں ایک ہزار رنز مکمل کیے تھے۔

بابر اعظم کو میچ کا جبکہ فخر زمان کو سیریز کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*