outline

ٹاور پہ چڑھنے والا نیچے کیسے اُترا؟کس نے جعلی وزیراعظم بن کر بات کی ؟

وزیراعظم بننے کے لیئے ہفتہ کی صبح ٹاور پر چڑھنے والا شخص جس کا مطالبہ تھا کہ اس کی وزیراعظم عمران خان سے ٹیلیفون پر بات کروائی جائے ،اس کی کس سے بات کروائی گئی اور پھر یہ شخص کیسے نیچے اترا،یہ کہانی بہت دلچسپ شکل اختیار کر گئی ہے

ہفتہ کی صبح اسلام آباد کے علاقے بلیو ایریا میں دلچسپ واقعہ پیش آیا جہاں ایک شخص ہاتھ میں قومی پرچم اٹھائے موبائل سگنل کے ٹاور پر جا چڑھا اور اس نے خود کو وزیراعظم بنانے کا مطالبہ کیا

کریدنے پر معلوم ہوا کہ اس شخص کا تعلق سرگودھا سے ہے اور اس کا مؤقف ہےکہ اسے وزیراعظم بنایا جائے، وہ پاکستان کے معاشی حالات ٹھیک کرے گا اور 6 ماہ میں ملک کا قرضہ اتار دے گا۔

اس کے علاوہ مذکورہ شخص نے یہ بھی مطالبہ کیا ہےکہ وہ وزیراعظم عمران خان اور ڈی پی او سرگودھا کے علاوہ کسی سے بات نہیں کرے گا اور بات کرانے تک نیچے بھی نہیں اترے گا۔

ایسی نازک صورتحال میں کسی دوراندیش پولیس افسر نے معروف نقال اور کامیڈین سید شفاعت علی سے رابطہ کیا اور ان سے کہا کہ وہ وزیراعظم عمران خان کا لب ولہجہ اختیار کرکے اس شخص سے بات کریں اور اسے نیچے اترنے پر آمادہ کریں

شفاعت علی نے وزیراعظم بن کر اس شخص سے بات کی اور تب کہیں جا کر وہ شخص نیچے اترنے پر رضامند ہوا۔نیچے آتے ہی پولیس نے اسے گرفتار کرلیا

سید شفاعت علی نے اس واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب وہ اس شخص سے بات کررہے تھے تو ان کی اپنی جان پر بنی ہوئی تھی

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*