outline
justice shaukat aziz siddique

جسٹس شوکت صدیقی کے الزامات،چیف جسٹس نوٹس لیں ،آرمی چیف ،جسٹس ثاقب نثار نے کارروائی کا عندیہ دیدیا

ہائیکورٹ کے سینئر ترین جج جسٹس شوکت عزیز صدیقی کے الزامات پر افواج پاکستان نے چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس ثاقب نثار سے تحقیقات کی درخواست کی ہے جبکہ چیف جسٹس نے جسٹس شوکت عزیز صدیقی کے خلاف کارروائی کا عندیہ دیدیا ہے

ڈی جی آئی ایس پی آر نے ٹوئٹر پر جاری بیان میں اسلام آباد ہائیکورٹ کے سینئر جج جسٹس شوکت عزیز صدیقی کی تقریر پر ردعمل کا اظہار کیا اور کہا کہ اسلام آباد ہائیکورٹ کے معزز جج نے عدلیہ اور سیکیورٹی ایجنسیوں سمیت ملک کے اہم اداروں پر سنگین الزامات لگائے ہیں۔

ترجمان پاک فوج نے کہا کہ ملکی اداروں کے وقار اور تکریم کے تحفظ کے لیے چیف جسٹس پاکستان آگے آئیں اور ایسا طریقہ کار وضع کریں جس سے الزامات کی حقیقت معلوم کی جا سکے اور پھر اس کے مطابق کارروائی کی جا سکے

ادھر سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں ایک مقدمے کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا ہے کہ اسلام آباد کے ایک جج کا بیان پڑھ کر بہت افسوس ہوا ۔جسٹس ثاقب نثار نے جسٹس شوکت عزیز کی تقریر پر شدید برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ بطور سربراہ یقین دلاتا ہوں ہم پر کسی کا دباؤ نہیں، چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ہم آزاد اور خود مختار کام کر رہے ہیں ۔

چیف جسٹس نے کہا کہ ایسے بیانات ناقابل فہم اور ناقابل قبول ہیں، جائزہ لیں گے کیا قانونی کارروائی ہوسکتی ہے، چیف جسٹس نے کہا کہ قانونی کارروائی کریں گے اور حقائق قوم کے سامنے لائیں گے ۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے گزشتہ روز راولپنڈی بار سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ آئی ایس آئی پوری طرح عدالتی معاملات کو مینی پولیٹ کرنے میں ملوث ہے، جسٹس صدیقی کا کہنا تھا کہ آئی ایس آئی والے اپنی مرضی کے بنچ بنواتے ہیں، آئی ایس آئی والوں نے ہمارے چیف جسٹس کو اپروچ کیا اور اپنی مرضی کا بنچ بنوایا

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*