تازہ ترین
outline

مادھوری گپتا آئی ایس آئی کے“ہنی ٹریپ“ کا شکار کیسے ہوئیں ؟

پاکستانی اہلکار کی محبت میں دل کے ساتھ ساتھ سرکاری راز دے بیٹھنے والی بھارتی خاتون سفارتکار مادھوری گپتا کو جاسوسی کے الزام میں عدالت سے تین سال قید کی سزا تو ہو گئی مگر یہ بات بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ مادھوری گپتا کون ہیں اور وہ پاکستانی خفیہ ادارے کے لیئے کام کرنے والے شخص کی باتوں میں کیسے آ گئیں ؟

مادھوری گپتا جن کی عمر اب 61 برس ہے ،غیر شادی شدہ خاتون ہیں ،ممبئی کے ایک فلیٹ میں اکیلی رہتی ہیں اور ان کے والدین وفات پا چکے ہیں

مادھوری گپتا نے 1980 میں بطور جونیئر کلرک بھارتی وزارت خارجہ میں ملازمت کا آغاز کیا اور اپنی قابلیت کے بل بوتے پر ترقی کرتی گئیں -پاکستان میں تعیناتی سے قبل مادھوری گپتا لائبیریا ،کروشیا ،ملائشیا اور عراق جیسے ممالک میں خدمات سرانجام دے چکی تھیں

مادھوری گپتا نے سفارتکاری کے شعبہ میں27برس کام کیا اور ان کے ساتھ کام کرنے والوں کا خیال ہے وہ ایک قابل اور جاذب نظر خاتون ہونے کے ساتھ ساتھ “عمر چور“ بھی تھیں یعنی اپنی حقیقی عمر کے مقابلے میں نوجوان دکھائی دیتی تھیں

Indian diplomat Madhuri-Gupta

مادھوری گپتا کو صوفی ازم میں دلچسپی تھی اور انہوں نے صوفی شاعر رومی کے افکار و خیالات پر بہت کام کیا اس کے علاوہ مادھوری گپتا کی خوبی یہ تھی کہ ان کی اردو بہت اچھی تھی -اسی خوبی کی بنیاد پر انہیں پاکستان تعینات کیا گیا

مادھوری گپتا اسلام آباد کے بھارتی سفارتخانے کے پریس اینڈ انفارمیشن ونگ میں سیکنڈ سیکریٹری کے طور پر کام کر رہی تھیں -پاکستانی میڈیا میں بھارت کے حوالے سے شائع ہونے والی خبروں اور مضامین پر نظر رکھنا اور روزانہ کی بنیاد پر رپورٹ تیار کرنا ان کی ذمہ داریوں میں شامل تھا

ممکن ہے بھارتی حکام نے مادھوری گپتا کو “ہنی ٹریپ“ کے طور پر پاکستان بھیجا ہو تاکہ وہ یہاں پاکستانی صحافیوں اور عسکری حکام کو اپنی ادائوں کے جال میں پھانس سکیں لیکن وہ خود اپنے دام میں آگئیں اور آئی ایس آئی کے ایک اہلکار کی محبت میں گرفتار ہو گئیں

آئی ایس آئی کے دو اہلکار جن کا اصل نام شاید کچھ اور ہو مگر وہ مبشر رضا رانا اور جمشید کے نام سےکام کر رہے تھے ،ان دونوں سے مادھوری گپتا کی دوستی ہوئی جو پیار میں بدل گئی اور مادھوری گپتا جمشید عرف جمی کو ٹوٹ کر چاہنے لگیں

اس دوران بھارتی حکام نے مادھوری گپتا کا ای امیل اکائونٹ اسکین کرتے ہوئے ایک ای میل پکڑی تو معلوم ہوا کی دونوں کے رومانوی تعلقات نہایت تیزی سے شادی کی طرف بڑھ رہے ہیں -اس ای میل میں مادھوری نے شکوہ کیا کہ جمی مجھے بے وفا کہتا ہے ،اسے میرے پاکستان میں دیگر لوگوں سے ملنے پر اعتراض ہے بھلا جب تک ہماری شادی نہ ہو جائے اور جب تک میں یہ ملازمت چھوڑ نہ دوں ،میں لوگوں سے ملنا جلنا کیسے چھوڑ سکتی ہوں

بھارتی حکام نے بھوٹان میں ہونے والی سارک کانفرنس کے بہانے مادھوری گپتا کو بھارت بلایا اور واپس آتے ہی 22 اپریل 2010 کو گرفتار کر لیا ۔باقی کی کہانی اور عدالتی  کارروائی آپ کے سامنے ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*