outline

ششی تھرور کی کتاب پر مہر تارڑ کی ٹویٹ ،کیا پرانی محبت جاگ اٹھی ؟

بھارت کے سابق وزیر ششی تھرور جو حکمران جماعت کانگرس کے اہم رہنما اور رُکن پارلیمنٹ ہیں ،ان کی وزیراعظم نریندرا مودی پر لکھی گئی نئی کتاب پاکستان میں ان کی کتاب زیست کے بعض پرانے اوراق کو ایک بار پھرکھولنے کا باعث بن گئی ہے

دراصل ہوا یوں کہ پاکستانی مصنفہ اور کالم نگار مہر تارڑ نے ششی تھرور کی کتاب کا عکس لیکر اپنے ٹوئٹر اکائونٹ پر ڈالا اور بتایا کہ ان دنوں وہ یہ کتاب پڑھ رہی ہیں بس پھر کیا تھا ،طنز و مزاح سے بھرپور ٹویٹس کی بوچھاڑ ہوگئی

ایک شخص نے لکھا ،لگتا ہے آپ ششی تھرور کو بھول نہیں پائیں -کسی اور نے تبصرہ کیا ،اس کتاب کی پہلی کاپی آپ ہی کو ملی ہوگی -ثاقب علی کاظمی نام کے ٹوئٹر ہینڈل سے کہا گیا کہ یہ تو “ٹرولز“ کو مدعو کرنے والی ٹویٹ ہے جس پر مہر تارڑ نے ہنستے ہوئے کہا کہ میں جو بھی کتاب پڑھتی ہوں اس کے بارے میں ٹویٹ ضرور کرتی ہوں -تھرور بہت شاندار لکھاری ہیں اور ہم دونوں کی کتاب ایک ہی پبلشر نے شائع کی ہے ،مجھے یہ کتاب میرے ایڈیٹر نے بطور تحفہ بھیجی –

بات دراصل یوں ہے کہ بھارت کے سابق سفارتکار اور موجودہ سیاستدان ششی تھرور کی اہلیہ سونندا پُشکر 17جنوری 2014 کو دہلی کے ایک پنج تارہ ہوٹل میں مُردہ پائی گئی تھیں ابتدائی طور پر پولیس کو لگا کہ یہ خودکشی کا کیس ہے مگر بعد ازاں کہا گیا کہ ششی تھرور کا پاکستانی صحافی مہر تارڑ سے لوافیئر ہے اور ان دونوں کے میسجز پڑھنے کے بعد میاں بیوی کا جھگڑا ہوا جس کے بعد خود کشی کا واقعہ پیش آیا

بعد ازاں پولیس نے ششی تھرور پر اپنی بیوی کے ساتھ ناروا سلوک اور خودکشی پر مجبور کرنے کی فرد جرم عائد کرتے ہوئے شامل تفتیش بھی کیا لیکن پھر یہ معاملہ آگے نہ بڑھ سکا

ششی تھرور اور مہر تارڑ دونوں نے ایسے ویسے تعلقات سے انکار کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ دونوں محض اچھے دوست ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*