outline

امرتسر ،راون پھونکنے والوں کو موت نے نگل لیا ،ٹرین کی زد میں آکر 60 افراد ہلاک

بھارتی پنجاب کے شہر امرتسر میں مذہبی تہوار کے موقع پر راون کو آگ لگانے کے لیئے جمع ہونے والے ٹرین کی زد میں آگئے اور اس حادثے میں ابتدائی طور پر 60 افراد ہلاک اور 100 سے زیادہ زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں

بھارتی میڈیا کے مطابق امرتسر کے جوڑا پھاٹک پر ایک ریلوے ٹریک کے پاس راون کو جلایا جا رہا تھا۔ اس دوران بہت سے لوگ ریل کی پٹڑی پر بھی بیٹھے ہوئے تھے۔ شام ساڑھے چھ بجے کے قریب جب راون کے پتلے کو آگ لگائی گئی تو سٹیج سے لوگوں کے پیچھے ہٹنے کی اپیل کی گئی۔ اسی دوران لوگ پیچھے ہٹے اور پٹڑی پر ٹرین آگئی۔ اس سے وہاں موجود بھیڑ کا ایک بڑا حصہ ٹرین کی زد میں آ گیا۔

اس پروگرام میں سٹیج پر پنجاب کے نائب وزیر اعلی نوجوت سدھو کی بیوی نوجوت کور سدھو بھی موجود تھیں۔ ڈپٹی پولیس کمشنر نے بتایا کہ ہسپتالوں اور ایمبیولنسس کو الرٹ پر رکھا گیا ہے۔

حادثے پر سیاسی حلقوں کی طرف سے بھی افسوس کا اظہار کیا گیا ہے۔ پنجاب میں حزب اختلاف کی جماعت شرومنی اکالی دل کے سربراہ سُکھبیر سنگھ بادل نے ٹویٹ کے ذریعے شدید افسوس کا اظہار کیا اور حکام سے سوال پوچھا ہے۔

انہوں نے لکھا، ‘امرتسر کے جوڑا گیٹ پر دسہرہ دیکھنے آئے بےگناہ افراد کو تیز رفتار ٹرین نے کچل دیا، اس حادثے کے بارے میں سن کر مجھے بہت افسوس ہو رہا ہے۔ مقامی حکام اور پولیس کو جواب دینا چاہیے کہ ریلوے ٹریک کے پاس راون کو جلانے کی اجازت کیسے دی گئی؟’

دلی سے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے بھی حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے لکھا، ‘امرتسر سے ایک بڑے ٹرین حادثے کی خبر آ رہی ہے۔ میں علاقے کے اپنے کارکنوں سے اپیل کرتا ہوں کہ امدادی کارروائی میں مدد کریں۔ مشکل کی اس گھڑی میں ہر ممکن مدد کریں۔’

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*