outline

ایف اے ٹی ایف کی منی لانڈرنگ اور دہشتگردوں کی مالی معاونت روکنے کے لیئے پاکستان کو مزید مہلت

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے ایشیا پیسفیک گروپ نے پاکستان کو منی لانڈرنگ اور دہشتگردوں کی مالی معاونت روکنے کے لیئے ڈو مور کا تقاضا کرتے ہوئے مزید مہلت دیدی ہے اور اب آئندہ برس مارچ یا اپریل میں دورہ کرکے صورتحال کا دوبارہ جائزہ لیا جائے گا

پاکستان اور ایف اے ٹی ایف کے ایشیا پیسفیک گروپ کےدرمیان مذاکرات ڈیڑھ ہفتے تک اسلام آباد میں جاری رہے جو اب ختم ہوگئے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہےکہ ایف اے ٹی ایف کے ایشیا پیسفیک گروپ کے وفد نے پاکستان کی جانب سے منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے کے لیے اب تک کی پیشرفت پر اطمینان کا اظہار بھی کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق ایشیا پیسفیک گروپ کے وفد نے آج صبح پاکستانی حکام سے اختتامی ملاقات کی جس میں وفد نے ابتدائی رپورٹ پاکستانی حکام کو پیش کی۔

ذرائع نے بتایاکہ ایشیا پیسفیک گروپ پہلی رپورٹ 19 نومبر تک پاکستان کو پیش کرے گا جب کہ گروپ نے مارچ یا اپریل 2019 میں دوبارہ پاکستان کا دورہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور ایشیا پیسفیک گروپ نے جولائی 2019 میں پاکستان کے حوالے سے رپورٹ پبلک کرنے کا بھی فیصلہ کیاہے۔

دوسری جانب حکومتی ذرائع کا بتانا ہےکہ منی ٹریل کی نشاندہی کے لیے مختلف اقدامات کی منظوری دی گئی ہے اور ایف اے ٹی ایف کی سفارشات پر ریگولیشنز 2018 میں ترمیم بھی کردی گئی ہے۔

واضح رہےکہ ایف اے ٹی ایف نے منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت کی روک تھام میں ناکامی پر پاکستان کو گرے لسٹ میں شامل کررکھا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*