outline

نیوزی لینڈ کی مساجد میں سفید فام دہشتگردوں کی فائرنگ،30 نمازی شہید،بنگلہ دیشی کرکٹرز بال بال بچ گئے

نیوزی لینڈ کی مساجد میں سفید فام دہشتگردوں کی وحشیانہ اور اندھا دھند فائرنگ سے کم ازکم30نمازی شہید ہوگئے ہیں جبکہ متعدد افراد شدید زخمی ہیں ایک مسجد میں فائرنگ کے وقت بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی بھی وہاں موجود تھے جو بال بال بچ گئے اور انہیں وہاں سے بحفاظت نکال لیا گیا ہے

عالمی میڈیا کے مطابق کرائسٹ چرچ کی ایک مسجد میں فائرنگ کا یہ واقعہ تب پیش آیا جب لوگ نماز جمعہ کی ادائیگی کے لیئے جمع تھے

مقامی وقت کے مطابق تقریباً ایک بجکر 40 منٹ سفید فام مسلح دہشتگرد ڈینز ایونیو کی النور مسجد میں داخل ہوا اور اندھا دھند فائرنگ شروع کردی ،فائرنگ کرتے وقت یہ شخص اپنے موبائل سے ویڈیو بھی بناتا رہا جو فیس بک پر لائیو نشر ہوتی رہی

مقامی میڈیا کے مطابق فائرنگ کا واقعہ ہیگلے پارک کے قریب ڈینز ایونیو کی مسجد میں پیش آیا جب کہ اسی علاقے کی ایک اور مسجد میں بھی فائرنگ کی اطلاعات ہیں -کرائسٹ چرچ کے پولیس کمیشنر مائیک بُش کے مطابق ڈین ایوینیو اور لِن ووڈ ایوینیو کی مساجد سے ہلاکتوں کی اطلاعات ہیں۔

نیوزی لینڈ پولیس حکام پولیس حکام کے مطابق اب تک چار افراد، جن میں ایک عورت بھی شامل ہے، کو اب تک حراست میں لیا جا چکا ہے جبکہ شہریوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ ڈینز ایونیو جانے سے گریز کریں اس کے علاوہ اس علاقے کےتمام سکول اور ہسپتال بند کر دیے گئے ہیں۔

حملے کے وقت بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی بھی مسجد میں موجود تھے تاہم انہیں بحفاظت وہاں سے نکال لیا گیا ہے اور نیوزی لینڈ کے دورہ پر آئی بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی تمیم اقبال نے ایک ٹویٹ میں بتایا کہ پوری ٹیم جان بچا کر نکلنے میں کامیاب ہوگئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*