outline

پی ٹی آئی کا ایک اور یو ٹرن،ارکان اسمبلی کو ترقیاتی فنڈز جاری کرنے کا فیصلہ

تحریک انصاف کی حکومت کے کریڈٹ پر اور کچھ ہو یا نہ ہو ،یو ٹرن لینے میں اس حکومت نے ایک ایسا ریکارڈ قائم کر دیا ہے جسے مستقبل میں کسی حکومت کے لیئے توڑنا مشکل ہی نہیں ناممکن ہوگا

جب تحریک انصاف اپوزیشن میں تھی تو ارکان اسمبلی کو ترقیاتی فنڈز جاری کرنے کی شدید مخالفت کی گئی اور اسے رشوت قرار دیا گیا -تحریک انصاف نے وعدہ کیا کہ بلدیاتی ادارے مضبوط بنا کر ترقیاتی کام ان کے ذریعے مکمل کیئے جائیں گے اور ارکان پالیمنٹ کا کام محض قانون سازی ہوگا

مگر اب معلوم ہوا ہے کہ پنجاب حکومت نے بھی سابقہ حکومتوں کی طرح اپنے ارکان صوبائی اسمبلی کو ترقیاتی فنڈز جاری کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ذرائع کے مطابق حکومت پنجاب نے اپنے ہر رکنِ صوبائی اسمبلی کے لیے 10 کروڑروپے مختص کرنے کا فیصلہ کیا ہے

ان ترقیاتی فنڈز کے اجرا کے لیئے تحریک انصاف کی صوبائی حکومت نے اپنے ارکان صوبائی اسمبلی سے ترقیاتی منصوبوں کی تجاویز پہلے ہی وصول کر لی تھیں تاہم فنڈز کی عدم دستیابی کے باعث گرانٹ کے اجرا میں تاخیر ہو رہی ہے

ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ پی ٹی آئی کی پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس پیر کے روز لاہور میں ہو رہا ہے جس میں ارکان صوبائی اسمبلی کے ترقیاتی کاموں کی تجاویز پر غور کرکے گرانٹ جاری کرنے کی منظوری دی جائے گی

اس اجلاس میں یہ معاملہ بھی زیر بحث آئے گا کہ ارکان صوبائی اسمبلی کے حلقوں میں تعینات بیوروکریسی تعاون نہیں کر رہی ،تبادلے اور تعیناتیاں ان کی مرضی کے مطابق نہیں ہو رہیں ،یہی وجہ ہے کہ انہیں دشواری پیش آرہی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*