outline

پنجاب کے وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان کو فارغ کرنے کا فیصلہ

پنجاب کے وزیراطلاعات و نشریات فیاض الحسن چوہان جو وزیر بنتے ہی ایک کے بعد دوسرے تنازع کا شکار ہوتے چلے گئے اور تاحال اسی قسم کی صورتحال کا شکار ہیں ان سے وزارت اطلاعات و نشریات کا قلمدان واپس لینے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے

نوجوان وزیر فیاض الحسن چوہان جو راولپنڈی سے صوبائی اسمبلی کے رُکن منتخب ہوئے تھے ،انہوں نے متعدد مواقع پر قابل اعتراض بیانات دیکر حکومت کے لیئے مشکلات کھڑی کر دیں مثال کے طور پر حلف اٹھانے کے چند روز بعد ہی اداکارہ نرگس کے بارے میں نازیبا بات کی اور پھر اس سے معافی مانگ کر معاملہ رفع دفع کرنا پڑا-

اس نوعیت کا آخری جھگڑا تب ہوا جب قاضی حسین احمد مرحوم کے بارے میں ہو رہے ایک تعزیتی ریفرنس میں صحافی کے سوال پر وہ اس قدر سیخ پا ہوئے کہ تمام صحافیوں کو بدتمیز قرار دیدیا اور پھر صحافیوں نے ان کا بائیکاٹ کر دیا

باوثوق ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی کی مرکزی قیادت کا خیال ہے کہ فیاض الحسن چوہان پارٹی کی رسوائی اور جگ ہنسائی کا باعث بن رہے ہیں اس لیئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ انہیں فارغ کرکے کسی متحمل مزاج شخصیت کو سامنے لایا جائے اس فیصلے سے وزیراعلیٰ پنجاب کو بھی آگاہ کر دیا گیا ہے اور جلد ہی باضابطہ اعلان متوقع ہے -ان کی جگہ کسے وزیر اطلاعات و نشریات بنایا جائے گا اس بارے میں ذرائع کا کہنا ہے کہ صمصام بخاری سمیت کئی نام زیر غور ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*