تازہ ترین
outline

قبائلی علاقوں کی نشستیں بڑھانے کے لیئے آئین میں ترمیم کا بل منظور ،الیکشن کھٹائی میں پڑگئے

پاکستان کے ایوان زیریں نے قبائلی علاقوں میں صوبائی اور قومی اسمبلی کی نشستیں بڑھانے کا آئینی ترمیمی بل منظور کرلیا ہے جس کے نتیجے میں ان علاقوں میں انتخابات کے انعقاد کا عمل ایک بار پھر کھٹائی میں پڑگیا ہے

پی ٹی آیم سے تعلق رکھنے والے آزاد امیدوار محسن داوڑ نے 26ویں آئینی ترمیمی کا بل قومی اسمبلی میں پیش کیا تھا -بل کی شق وار منظوری کا عمل شروع ہوا تو بل کی دوسری شق میں 2 ترامیم منظور کی گئی، ایک ترمیم رکن اسمبلی محسن داوڑ اور دوسری وفاقی وزیر نور الحق قادری نے پیش کی۔

دوسری شق میں ترمیم کے حق میں 281 ووٹ آئے جبکہ کسی رکن اسمبلی نے اس کی مخالفت میں ووٹ نہیں دیا، اسی طرح بل کی تیسری شق میں بھی ترمیم بھی 2 تہائی اکثریت سے منظور ہوگئی

واضح رہے کہ اس بل کی منظوری کے بعد خیبرپختونخوا میں ضم ہونے والے قبائلی علاقوں کی قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں میں اضافہ ہوجائے گا، اس اضافے سے فاٹا کی قومی اسمبلی کی نشستیں 6 سے بڑھ کر 12 جبکہ صوبائی اسمبلی کی نشستیں 12 سے بڑھ کر 24 ہوجائیں گی۔

قبل ازیں الیکشن کمیشن نے قبائلی علاقوں کے انضمام کا عمل مکمل ہونے کے بعد ان علاقوں میں انتخابات کا اعلان کر رکھا تھا جو اس آئینی ترمیمی بل کے نتیجے میں کھٹائی میں پڑنے کا امکان ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*