تازہ ترین
outline

تحریک انصاف حکومت نے عرب شہزادوں کوتلورکے شکارکے لیئے12پرمٹ جاری کر دیئے

اگرچہ تحریک انصاف حکومت میں رہتے ہوئے عرب شہزادوں کو تلور کا شکار کرنے کے لیئے جاری ہونے والے اجازت ناموں پر کڑی تنقید کرتی رہی ہے مگر اب وفاقی حکومت نے عرب ممالک کے شاہی خاندانوں کے لیئے تلور کا شکار کرنے کے لیئے کم از کم 12 پرمٹ جاری کر دیئے

واضح رہے کہ قطری شہزادے کو اس بنیاد پر تنقید کا نشانہ بنایا گیا کہ اس نے شریف خاندان کو پانامہ کیس میں خط مہیا کیا جبکہ حکومت کی طرف سے شکار کے اجازت ناموں کو سیاسی رشوت قرار دیا جاتا رہا مگر اب چار قطری شہزادوں کو بھی شکار کی اجازت دی گئی ہے

وزارت خارجہ کے ذرائع کے مطابق ڈپٹی چیف پروٹوکول افسر محمد عدیل پرویز کے دستخطوں سے جو پرمٹ جاری کیئے گئے ہیں ان میں گورنر تبوک شہزادہ فہد بن سلطان عبدالعزیز السعود بھی شامل ہیں جنہیں جنہیں بلوچستان کے ضلع آواران اور نوشکی میں تلور کا شکار کھیلنے کی اجازت دی گئی ہے

سعودی عرب کے شہزادہ منصور بن محمد ایس عبدالرحمان السعود کو تلور کا شکار کرنے کے لیئے بلوچستان کے ضلع ڈیرہ بگٹی اور سوئی کے علاقے الاٹ کیئے گئے ہیں

متحدہ عرب امارات کے صدر اور ابوظہبی کے حکمران شیخ خلیفہ بن زید النیہان اور ابوظہبی کے ولی عہد شہزادہ شیخ محمد بن زید النیہان کو بلوچتسان کے ضلع پنجگور ،خاران ،قلات اور ژوب کے علاقوں میں تلور کا شکار کرنے کے لیئے پرمٹ جاری کیا گیا ہے

متحدہ عرب امارات کے صدر شیخ خلیفہ بن زید کے بیٹے اور ابوظہبی کے سابق نائب وزیراعظم شیخ محمد بن خلیفہ بن زید النیہان کو بلوچستان کے ضلع لورالائی کا علاقہ الاٹ کیا گیا ہے جبکہ مغربی خطے میں ابوظہبی کے سربراہ کے نمائندے شیخ حمدان بن زید النہیان کو ضلع سبی کی تحصیل لہری میں تلور کا شکار کرنے کی اجازت دی گئی ہے

متحدہ عرب امارات کے نائب صدر ،وزیراعظم اور دبئی کے حکمران شیخ محمد بن راشد المکتوم اور ان کے ولی عہد شہزادے شیخ حمدان بن محمد بن راشد المکتوم کو چاغی ضلع کے علاقے نوکنڈی ،لسبیلہ کے کچھ علاقوں اور خضدار کی بعض شکار گاہوں میں تلور کا شکار کرنے کی اجازت دی گئی ہے

امیر قطر شیخ تمیم بن حماد بن خلیفہ الثانی کو بلوچستان کے ضلع واشوک کی شکار گاہ الاٹ کی گئی ہے جبکہ ان کے چچا شیخ جاسم بن حماد بن خلیفہ الثانی کو موسیٰ خیل ضلع کی دو تحصیلوں اور ضلع کیچ کی شکار گاہ میں تلور کا شکار کرنے کے لیئے پرمٹ جاری کیا گیا ہے

اسی طرح قطر کی سپریم کونسل کے رُکن اور شاہی خاندان کے فرد شیخ علی بن عبداللہ ثانی الثانی کو ضلع کیچ اور ہوشپ کے علاقوں میں شکار کرنے کے لیئے پرمٹ جاری کیا گیا ہے -قطری شاہی خاندان کے ہی ایک اور فرد شیخ فیصل بن نصیر بن حماد الثانی کو قلعہ سیف اللہ میں شکار کرنے کی اجازت دی گئی ہے

بحرینی فوج کے سپہ سالار شیخ خلیفہ بن احمد الخلیفہ کو بلوچستان کے ضلع جعفر آباد میں شکار کرنے کی اجازت دی گئی ہے جبکہ بحرین کے وزیر داخلہ لیفٹیننٹ جنرل شیخ راشدبن عبداللہ الخلیفہ کو بھی اسی ضلع میں ایک اور شکار گاہ الاٹ کی گئی ہے

ماہرین کا خیال ہے کہ حکومت پاکستان نے عرب شہزادوں کو تلور کے شکار کے لیئے پرمٹ جاری کرکے پاکستان کا جی پی ایس پلس اسٹیٹس خطرے میں ڈال دیا ہے یورپین یونین کی طرف سے یہ اسٹیٹس دیئے جانے کے نتیجے میں ٹیکسٹائل کی مصنوعات کو یورپی منڈی تک رسائی حاصل ہوتی ہے مگر چونکہ تلور ایک نایاب پرندہ ہے اور یورپی یونین کے چارٹر کے مطابق اس کے شکار پر پابندی ہے اس لیئے اس اسٹیٹس پر نظر ثانی کی جا سکتی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*