تازہ ترین
outline

نوازشریف کی حالت تشویشناک،جیل حکام نے معالج کو رسائی نہ دی۔صورتحال خطرناک ہوسکتی ہے،ڈاکٹر

سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد میاں نوازشریف کی صحت کے بارے میں موصول ہونے والی اطلاعات بہت تشویشناک ہیں مگر جیل حکام نے ان کے ذاتی معالج کو ملنے کی اجازت نہیں دی جس پر تشویش کا اظہار کیا گیا ہے

اطلاعات کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کو بازو میں وقفے وقفے سے درد کی شکایت ہے اور اسے انجائنا یعنی عارضہ قلب کی علامت سمجھا جا جاتا ہے

صورتحال کی نزاکت کے پیش نظر میاں نوازشریف کے ذاتی معالج انہیں دیکھنے کے لیئے کوٹ لکھپت جیل پہنچے مگر جیل حکام نے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کو نواز شریف سے ملاقات کی اجازت نہ دی

نوازشریف کی صاحبزادی مریم نواز نے اس واقعہ کی تفصیل بیان کرتے ہوئے بتایا ہے کہ ان کے والد کو صبح سے ہی بازو میں درد کی شکایت ہے اور ان کے معالج کے مطابق چونکہ میاں نوازشریف دل کے مریض ہیں اس لیئے یہ علامت خطرناک ہو سکتی ہے مگر جیل حکام نے انہیں ملنے نہیں دیا اور کہا کہ پیر کو آئیں

یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ جیل حکام نے شام پانچ بجے جیل میں تعینات میڈیکل افسر سے ڈاکٹر عدنان کی بات کرائی جس میں انہوں نے نواز شریف کی صحت بارے سنگین خدشات سے آگاہ کیا۔

ڈاکٹر عدنان نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ نواز شریف کو انجائنا کا خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔مگر جیل حکام نے انہیں یہ کہ کر ملاقات سے منع کر دیا کہ یہ لاک اپ ٹائم ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*