outline

ڈی پی او کے سر پر دستِ شفقت رکھنے پربزرگ شہری قید، وزیراعلیٰ نے نوٹس لے لیا

بزرگ شہری کا خاتون پولیس افسر کے سر پر دستِ شفقت رکھنا جرم بن گیا ،غرور میں مبتلا ڈی پی او اس قدر برہم ہوئیں کہ اسی وقت معمر شہری کو حراست میں لے لیا گیا اور بعد ازاں مقمدمہ درج کرکے اسے لاک اپ میں بند کر دیا گیا جس پر وزیراعلیٰ پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کر لی ہے

واقعہ کی تفصیل کچھ یوں ہے کہ ڈی پی او پاکپتن ماریہ محمود کی کھلی کچہری میں شکریک انجمن تاجران کے صدر صوفی محمد رشید جن کی عمر 70 سال ہے انہوں نے حوصلہ بڑھانے کے لیئے ڈی پی او کے سر پر ہاتھ رکھا جو انہیں شدید ناگوار گذرا اور انہوں نے نہ صرف موقع پر بزرگ شہری سے بدتمیزی کی بلکہ بعد ازاں انہیں گرفتار کرلیا گیا

کچھ دیر بعد ایس ایچ او کی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے اس معمر شہری کی باقاعدہ گرفتاری بھی ڈال دی گئی –

اس پر انجمن تاجران نے ٹائر جلا کر احتجاج کیا اور سڑک بلاک کر دی -مذاکرات کے بعد پولیس نے صوفی محمد رشید کو رہا تو کر دیا تاہم ایف آئی آر ختم نہیں کی گئی

اس واقعہ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہوئی چنانچہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے آج معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے آر پی او ساہیوال سے واقعےکی رپورٹ طلب کرتے ہوئے جامع تحقیقات کر کے 48 گھنٹے میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*