تازہ ترین
outline

لاہور کے سینئر صحافی رضوان رضی کو سوشل میڈیا پر تنقید کے جرم میں اٹھا لیا گیا

پاکستان کا آئین ہر شہری کو اظہار رائے کی آزادی فراہم کرتا ہے مگر ہفتہ کی صبح لاہور کے معروف صحافی رضوان رضی کو نامعلوم افراد نے اغوا کرلیا

رضوان رضی جو “رضی داد“ کے نام سے مشہور ہیں کیونکہ ریڈیو پر “دادپوتا شو“ کرتے ہیں ،ان کے ٹوئٹر ہینڈل سے صبح نوبجے قریب ٹویٹ کی گئی “میں داد جی کا بیٹا لکھ رہا ہوں ۔ابھی صبح سویرے میرے باپ کو کچھ لوگ مارتے ہوئے گاڑی میں ڈال کر لے گئے ہیں“

کچھ دیر بعد ایک اور ٹویٹ میں بتایا گیا “کچھ لوگوں سے بات کرنے کے بعد یہ انکشاف ہوا ہے کہ میرے والد صاحب کو پہلے کالی گاڑی میں لیکر گئے اور تھوڑی دور جا کر ایک رینجرز کی گاڑی میں بٹھا دیا گارڈ کہتا ہے کہ اس نے حرکت صبح آٹھ بجے سے نوٹس کی مسلسل جب وہ ڈیوٹی پر آیا “

تازہ ترین اطلاعات کے مطابق رضی داد کو ایف آئی اے کی تحویل میں دیدیا گیا ہے اور ان کے خلاف سائبر کرائم ایکٹ کے تحت ریاستی اداروں کو سوشل میڈیا پر ہدف تنقید بنانے کا الزام عائد کیا گیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*