تازہ ترین
outline

ٹرمپ سے تلخ سوالات کرنے والے سی این این رپورٹر کے وائٹ ہائوس داخلے پر پابندی

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ جو پہلے ہی میڈیا سے خفا رہتے ہیں ،انہوں نے وسط مدتی انتخابات میں شکست کا غصہ ایک رپورٹر پر اتار دیا جس نے ان سے سخت سوالات پوچھنے کی جسارت کی تھی

 

وائٹ ہائوس میں امریکی صدر کی پریس بریفنگ کے دوران نیوز چینل سی این این کے نمائندے جم اکوسٹا نے ٹرمپ کے سابقہ بیانات کو غلط ثابت کرتے ہوئے تلخ سوالات کیئے تو ڈونلڈ ٹرمپ تلملا اٹھے اور انہوں نے اس رپورٹر کو کہا کہ تم بہت برے اور بدتمیز شخص ہو ہیں،مائیک چھوڑ دو-

تاہم وہ رپورٹر بات کرتا رہا ،ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ تم سی این این چلائو ،ملک چلانا میرا کام ہے،رپورٹر نے مزید سوال کرنے کی کوشش کی تو ٹرمپ نے کہا بس بہت ہو گیا،اس دوران وائٹ ہاؤس کی ایک اہلکار نے صحافی سے مائیک لینے کی کوشش کی لیکن اس نے خاتون اہلکار کا ہاتھ جھٹک دیا

ڈونلڈ ٹرمپ مزید سیخ پا ہو گئے اور انہوں نے کہا بس بہت ہو گیا ،یہ کہہ کر ڈونلڈ ٹرمپ ڈائس سے ہٹ گئے اور جب تک وہ صحافی بیٹھ نہیں گیا ،وہ واپس نہیں آئے

اس کے بعد ایک اور صحافی پیٹر کو سوال کرنے کی اجازت دی گئی تو اس نے سی این این کے رپورٹر جم اکوسٹا کا دفاع کرتے ہوئے کہا وہ ایک اچھا رپورٹر ہے اس پر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ میں تمہارا بھی مداح نہیں ہوں

وائٹ ہاؤس نے صدر ٹرمپ سے پریس کانفرنس میں بحث کرنے کے بعد نیوز چینل سی این این کے نمائندے جم اکوسٹا کا صحافتی اجازت نامہ معطل کر دیا ہے

وائٹ ہاؤس کی ترجمان سارہ سینڈرز نے کہا کہ صحافی جم اکوسٹا کا اجازت نامہ معطل کرنے کی وجہ ان کے سوالات نہیں بلکہ ‘اس نوجوان لڑکی کو ہاتھ لگانا تھا۔’

انھوں نے ٹویٹ میں کہا:’ ہم بالکل بھی برادشت نہیں کریں گے کہ ایک رپورٹر نے وائٹ ہاؤس کی اہلکار کو ہاتھ لگایا جو صرف اپنا کام کر رہی ہے۔ ہم اس واقعے کے بعد رپورٹر کا اجازت نامہ معطل کر رہے ہیں۔’

صحافی جم اکوسٹا نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ امریکی خفیہ سروس نے انھیں وائٹ ہاؤس میں داخل ہونے سے انکار کر دیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*