outline

بھارت اس ماہ پلوامہ جیسی شعبدہ بازی کرکے پاکستان پر حملہ کر سکتا ہے،وزیر خارجہ شاہ محمود کا خدشہ

پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اس اندیشے کا اظہار کیا ہے کہ رواں ماہ کے وسط میں بھارت کی جانب سے پاکستان میں کسی قسم کی عسکری مہم جوئی کی کوشش کی جا سکتی ہے اور اس حوالے سے پاکستان کے پاس قابل بھروسہ اطلاعات دستیاب ہیں

شاہ محمود قریشی نے انکشاف کیا کہ کہ بھارت پاکستان کے خلاف جارحیت کا نیا منصوبہ بنارہا ہے اور 16 سے 20 اپریل کے درمیان کارروائی کی جا سکتی ہے

وزیر خارجہ نے بتایا کہ وزیراعظم سے مشاورت کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ اس اطلاع کو عالمی برادری کیساتھ شیئر کیا جائے تاکہ بھارت کو جارحیت سے باز رکھا جا سکے

وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ اس کارروائی سے قبل انڈیا کے زیرِ انتظام کشمیر میں پلوامہ حملے جیسا واقعہ رونما ہو سکتا ہے جس کو بنیاد بنا کر پاکستان کے خلاف نہ صرف سفارتی دباؤ بڑھایا جائے گا بلکہ عسکری کارروائی کو جواز بھی فراہم کیا جائے گا۔

دوسری جانب پاکستانی وزیر خارجہ کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے انڈین حکومت کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ‘انڈیا اِس غیر ذمہ دارانہ اور احمقانہ بیان کو مسترد کرتا ہے۔’

انھوں نے پاکستانی وزیرِخارجہ کے بیان کو واضح طور پر خطے میں جنگی جنون کو بڑھانے کے مترادف قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ ہتھکنڈے بظاہر پاکستان میں پائے جانے والے دہشت گردوں کو انڈیا میں دہشت گرد حملہ کرنے پر اکسانا ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان پر یہ واضح کر دیا گیا ہے کہ وہ انڈیا میں ہونے والے سرحد پار حملوں کی ذمہ داری سے مبرا نہیں ہو سکتا۔ اور اس پیچیدہ معاملے میں کسی عذر سے کامیاب نہیں ہو سکتا۔

دوسری جانب ترجمان دفترخارجہ کا کہنا ہے کہ بھارت کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو دفتر خارجہ طلب کیا گیا جہاں انہیں بھارت کی کسی بھی مہم جوئی کے خلاف خبردار کیا گیا ہے

واضح رہے کہ پلوامہ حملے کے بعد بھارت نے پاکستانی کی فضائی حدود میں داخل ہو کر سرجیکل اسٹرائک کا دعویٰ کیا تھا جس کے بعد پاکستانی فضائیہ نے دو بھارتی طیارے مار گرائے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*