تازہ ترین
outline

نوازشریف واپس کوٹ لکھپت جیل منتقل ،والد کو کچھ ہوا تو چُپ نہیں رہوں گی -مریم نواز

سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کو سروسز ہاسپٹل سے واپس کوٹ لکھپت جیل منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ ان کی بیٹی مریم نواز نے متنبہ کیا ہے کہ اگر میرے والد کی صحت سے کھلواڑ کیا گیا، یا اس کو سیاست کی نظر کیا گیا، یا ان کو خدا نہ خواستہ کوئی نقصان پہنچا تو اس کی ذمہ داری حکومت پر ہو گی۔

میڈیکل بورڈ نے نوازشریف کا معاملہ محکمہ داخلہ کو ریفر کیا تھا اور ان کو فوری طور پر امراضِ قلب کے اسپتال منتقل کرنے کی سفارش کی تھی تاہم سابق وزیراعظم نے اسپتال کی بجائے واپس جیل جانے پر اصرار کیا تھا

نوازشریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہا ہے کہ میں نے چپ رہ کر سب کچھ سہا اور مانگا تو صرف اللّہ سے، کسی چیز پر سیاست نہیں کی

موجودہ صورتحال سے متعلق ٹوئٹر پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ بہت بڑی آزمائش آئی مگر توکل الّلہ پر رکھا، حکومت سے نہ کبھی علاج کی درخواست کی نہ کریں گے۔ میری مرحوم والدہ جب بسترِمرگ پر تھیں، ان خوفِ خدا سے عاری انسانوں نے جو اب حکومت میں ہیں ان کی بیماری کا مزاق اڑایا تھا۔ ظلم کی رات چھوٹی مگر اس کی پکڑ بہت بڑی۔

مریم نواز نے اپنے والد کی صحت سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ ایک کے بعد دوسرا بورڈ اور ایک اسپتال کے بعد دوسرا اسپتال۔ پہلے PIC, پھر جیل، پھر سروسز اسپتال جہاں امراض قلب کا شعبہ ہے ہی نہیں۔ اب پھر PIC لے جانے کی کوشش۔ میاں صاحب نے انکار کر دیا اور کہا کہ میں نہ خانہ بدوش ہوں نہ تضحیک کا نشانہ بننے کو تیار ہوں، مجھے واپس جیل لے جایا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*