تازہ ترین
outline

سامان باندھ لیا ،واپس جیل بھیجا جائے،نوازشریف کا اصرار،حکومت کا سروسز اسپتال میں ہی رکھنے کا فیصلہ

سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد میاں نوازشریف جن کی طبی بنیادوں پر ضمانت کی درخواست پر سماعت ملتوی ہو گئی ہے انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ کسی اور ہاسپٹل منتقل کرنے کے بجائے انہیں واپس جیل منتقل کیا جائے

قبل ازیں سابق وزیراعظم نواز شریف کا طبی معائنہ کرنے والے میڈیکل بورڈ کے سربراہ ڈاکٹر محمود ایازنے سفارش کی تھی کہ نوازشریف کا امراض قلب کے اسپتال میں علاج کروایا جائے

میڈیکل بورڈ کی سفارشات کے برعکس میاں نوازشریف نے پی آئی سی میں منتقل ہونے سے انکار کردیا ہے اور سروسز اسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ سے جیل بھجوانے کی درخواست کی ہے

سروسز اسپتال کے ایم ایس سے مکالمہ کے دوران سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ تین بورڈز طبی معائنہ کرچکے، اب پھر نئے اسپتال لے جانا چاہتے ہیں، میں پھلے بھی پی آئی سی میں جا چکا ہوں، پھر سروسز اسپتال لایا گیا، یہ خانہ بدوشی مناسب نہیں میں نے سامان باندھ لیا ہے واپس جیل بھیجا جائے

اُدھر پنجاب حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ سابق وزیراعظم نوازشریف کو پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی منتقل کرنے کے بجائے سروسز ہاسپٹل ہی رکھا جائے گا اور وہیں پر امراض قلب کے ماہرین ان کا علاج کریں گے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*