تازہ ترین
outline

ہندو کمیونٹی کی دل آزاری:فیاض الحسن چوہان فارغ،صمصام بخاری کو وزیر اطلاعات بنائے جانے کا امکان

ہندو کمیونٹی کی دل آزاری پر مبنی بیان دینے پر پنجاب کے وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان کو فارغ کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے اور ایوان وزیراعلیٰ پنجاب کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ ان سے استعفیٰ مانگ لیا گیا ہے

ٹی وی چینلز پر چل رہی خبروں کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے وزیر اطلاعات و نشریات فیاض الحسن چوہان کو طلب کیا اور ان سے متنازع بیان پر مستعفی ہونے کو کہا

صوبائی وزیر اطلاعات و نشریات فیاض الحسن چوہان متنازع بیانات دینے کے حوالے سے مشہور ہیں ،انہوں نے کئی مواقع پر قابل اعتراض بیانات دیئے یہاں تک کہ صحافیوں کے ساتھ بھی بدزبانی کے واقعات پیش آئے

کئی بار یہ اطلاعات ملیں کہ انہیں فارغ کیا جا رہا ہے مگر وہ بدستور کام کرتے رہے ۔چند روز قبل انہوں نے پاک بھارت کشیدگی کے تناظر میں تقریر کرتے ہوئے کچھ ایسی باتیں کیں جن میں ہندو کمیونٹی کو مجموعی طور پر تنقید کا نشانہ بنایا گیا

ایوان وزیراعلیٰ کے ذرائع کے مطابق وزیر اطلاعات کی جانب سے استعفیٰ دیے جانے کے بعد اسے وزیراعظم عمران خان کو بھجوایا جائے گا اور اس کی منظوری کا حتمی فیصلہ وزیراعظم ہی کریں گے۔

دوسری جانب فیاض الحسن چوہان نے اپنے ایک بیان میں کہا ہےکہ وزیراعلیٰ پنجاب سے ان کی ملاقات ہوئی ہے اور انہوں نے بیان پر وضاحت مانگی ہے، کوئی استعفیٰ نہیں مانگا گیا لہٰذا استعفے استعفے والی خبروں میں کوئی صداقت نہیں-مگر تازہ ترین اطلاعات کے مطابق فیاض الحسن چوہان سے استعفیٰ لے لیا گیا ہے اور ان کی جگہ صمصمام بخاری کو وزیر اطلاعات بنائے جانے کا امکان ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*