outline
khan meter

نئے پاکستان کا “خان میٹر“ کب چالو ہو گا ؟

دنیا بھر میں انقلابی اور اصلاحاتی ایجنڈے کے تحت جب نئی حکومتیں آتی ہیں تو ان کی کا کردگی پر کڑی نظررکھی جاتی ہے اور مختلف ادارے اپنے اپنے انداز میں جائزہ لیتے ہیں کہ اس حکومت نے کونسا وعدہ پورا کیا اور کونسے اہداف حاصل کرنے میں ناکام رہی

اسی طرح نئے پاکستان میں بھی پہلی مرتبہ تحریک انصاف کے سربراہ اور ملک کے متوقع وزیر اعظم عمران خان کے وعدوں کا جائزہ لینے کے لیے شہری کی جانب سے ایک ویب میٹر متعارف کروایا گیا ہے جسے ’خان میٹر‘ کا نام دیا گیا ہے۔

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے ایک شہری سلمان سعید نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے 100روزہ پلان کا یومیہ بنیادوں پر جائزہ لینے کے لیے انٹرنیٹ پر ’خان میٹر ‘ متعارف کرایا ہے

اس “خان میٹر“ پر عمران خان کے وعدوں کو سات مختلف کیٹیگریز میں تقسیم کیا گیا ہے جن میں معیشت ،زراعت ،پانی ،سکیورٹی ،معاشرت ،گورننس اور فیڈریشن سے متعلق عوام سے کیئے گئے وعدے شامل ہیں

اس میٹر پر عمران خان کے اقتدار میں آنے کے بعد ان کی کارکردگی کا روزانہ کی بنیاد پر جائزہ لیا جائے گیااور یہ دیکھا جا ئے گا کہ انہوں نے کتنے وعدوں کی تکمیل کا کام شروع کر دیا ہے، کتنوں پر کام شروع نہ ہوسکا اور کتنے وعدے پورے ہی نہیں ہوئے۔

عمران خان کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لیئے “خان میٹر“ کے نام سے ویب سائٹ متعارف کروانے والے سلمان سعید کہتے ہیں کہ انہوں نے بنیادی تصور “اوبامہ میٹر“ سے لیا -یاد رہے کہ امریکی صدر اوبامہ کے برسر اقتدار آنے پر بھی اسی طرح کی ایک ویب سائٹ بنائی گئی تھی

سلمان سعید نے بتایا کہ ’خان میٹر‘ بنانے کا مقصد جماعت کے دعوؤں اور وعدوں پر فیصلہ کرنا نہیں، بلکہ ان کی تکمیل اور عدم تکمیل کا جائزہ لینا ہے، اس کا مقصد موثر جمہوریت کا قیام ہے۔

سلمان کے مطابق ’خان میٹر‘ ویب سائٹ پر مکالمے اور مباحثہ کا فورم بھی موجود ہے، جہاں صارفین اپنی رائے دے سکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*