تازہ ترین
outline

رانا ثنااللہ کو ایک بار پھر اُٹھالیا گیا،منشیات برآمد ہونے پر گرفتارکیا ،اے این ایف

مسلم لیگ (ن) کے صوبائی صدر اور پنجاب اسمبلی کےرُکن اسمبلی رانا ثناء اللہ کو فیصل آبادسے لاہور آتے ہوئے موٹروے پر پراسرار انداز میں اٹھالیا گیا اور بعد ازاں اینٹی نارکوٹکس فورس نے ان کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ رانا ثنا اللہ کی گاڑی سے ہیروئن برآمد ہونے پر انہیں گرفتار کیا گیا ہے

انسداد منشیات فورس کے ترجمان ریاض سومرو نے کہا ہے کہ رانا ثناء اللہ کی گاڑی سے منشیات کی بھاری مقدار برآمد ہوئی ہے، ان کے خلاف نارکوٹکس ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیا جارہا ہے

ٹی وی چینلز کے مطابق رانا ثناء اللہ کی گاڑی FH255 تین بجکر 19 منٹ پر لاہور ٹول پلازہ سے ایگزٹ ہوئی تاہم ان کا دوپہر ڈیڑھ بجے کے بعد سے خاندان کے کسی فرد سے رابطہ نہیں ہوا، ان کے ذاتی گارڈز اور ڈرائیور کے نمبر بھی بند مل رہے تھے

جیو نیوز نے اپنے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ رانا ثناء اللہ کی گرفتاری ہائی ویلیو منشیات اسمگلرز سے متعلق انسداد منشیات فورس کے انویسٹی گیشن سیل کی جانب سے اہم انٹیلی جنس معلومات کی بنیاد پر عمل میں لائی گئی

بتایا گیا ہے کہ اے این ایف نگرانی کے طویل عمل کے بعد پتہ چلانے میں کامیاب ہوا کہ رانا ثناء اللہ ہیروئن کی ایک بڑی مقدار اسلام آباد سے بذریعہ موٹروے لاہور اسمگل کریں گے

یکم جولائی کو خفیہ معلومات کی روشنی میں اے این ایف ٹیم نے سہہ پہر 3 بج کر 24 منٹ پر رانا ثناء اللہ کی بلٹ پروف لینڈ کروزر گاڑی کو راوی ٹول پلازہ پر روکا۔

ن لیگی رکن قومی اسمبلی کے مسلح گارڈز بھی ایک اور گاڑی میں ان کے ساتھ سفر کر رہے تھے، رانا ثناء اللہ کی گاڑی کی تلاشی کے دوران خفیہ خانوں میں موجود بیگز میں چھپائی گئی 15کلو ہیئروئن برآمد ہوئی۔

واضح رہے کہ فوجی ڈکٹیٹر پرویز مشرف کے دور میں بھی رانا ثنااللہ کو اٹھا لیا گیا تھا ،بتایا گیا کہ انہیں اے این ایف نے حراست میں لیا ہے مگر اس دوران رانا ثنا اللہ کی مونچھیں اور بھنویں مونڈ دی گئیں اور انہیں تشویشناک حالت میں موٹروے کے قریب پھینک دیا گیا

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*