تازہ ترین
outline

راحیل شریف کو توسیع نہ دینے پر جنرل رضوان نے میرا خانساماں اٹھوالیا،اسحاق ڈار

سابق وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار جو ان دنوں لندن میں ہیں اور عدالتیں انہیں اشتہاری قرار دے چکی ہیں ،انہوں نے انکشاف کیا ہے کہ جنرل راحیل شریف کو توسیع نہ دینے پر اس وقت کے ڈی جی آئی ایس آئی جنرل رضوان نے ان کے خانساماں کو اٹھوالیا تھا تاہم جنرل راحیل شریف کا اس واردات سے کوئی تعلق نہیں تھا

نجی نیوز چینل ”24نیوز“کے پروگرام میں اینکر پرسن نسیم زہرہ نے سوال کیا کہ ڈار صاحب آپ کا خانساماں بھی تو اٹھایا گیا تھا؟ اس پر جواب دیتے ہوئے اسحاق ڈار نے کہا کہ خانساماں اس وجہ سے اٹھایا گیا کہ سابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف کو توسیع نہیں ملی تھی، اگر انہیں توسیع مل جاتی تو اس وقت کے ڈی جی آئی ایس آئی اگلے سال چیف آف آرمی سٹاف بن سکتے تھے کیونکہ وہ سب سے سینئر تھے۔

اسحاق ڈار نے بتایا کہ میں پیرس میں فرانسیسی صدر کے ساتھ میٹنگ کر رہاتھا جب مجھے پیغام ملا کہ میرا خانساماں گھر کے لیے نکلا لیکن اسے راستے میں اٹھا لیا گیا۔ میں نے پیرس سے ہی اس وقت کے آرمی چیف کو فون کیا جس کے اڑتالیس گھنٹے کے بعد صبح کے وقت خانساماں کو اس کے گاﺅں کے باہر پھینک دیا گیا۔ مجھے یقین ہے کہ خانساماں کے بازیاب ہونے میں آرمی چیف کا بھی کردار رہا ہو گا۔

سابق وزیر خزانہ نے بتایا کہ انہوں نے جب پاکستان جا کر اس حوالے سے رپورٹ لی تو پتہ یہی لگا کہ ایک ایجنسی نے یہ کام کیا۔ میں نے موجودہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو بھی یہ بات بتائی اور بعد میں انہوں نے تصدیق کی کہ وہ صاحب اس کام میں ملوث تھے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سارے معاملے میں آرمی چیف جنرل راحیل شریف ملوث نہیں تھے لیکن یہ کام اس وقت کے ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر نے کروایا تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*