outline
death

کیا واقعی یکم جنوری سال کا منحوس ترین دن ہے؟

نیویارک(فارن ڈیسک)امریکی سائنسدانوں نے طویل تحقیق کے بعد یہ نتیجہ اخذ کیا ہے کہ وہ سال کا کونسا دن ہے جب سب سے زیادہ اموات ہوتی ہیں اور کن وجوہات کی بنیاد پر لوگ مرتے ہیں-
اس تحقیق کے دوران سائنسدانوں نے امریکہ میں گزشتہ پچیس برس کے تمام ڈیتھ سرٹیفکیٹ چیک کیئے اور یہ جاننے کی کوشش کی کون کب کس طرح مرا؟ حیران کن طور پر یہ بات معلوم ہوئی کہ سب سے زیادہ اموات نئے سال کے پہلے دن یعنی یکم جنوری کو ہوتی ہیں-خودکشی اور اس نوعیت کی دیگر اموات تو اس لیئے قابل فہم ہیں کہ لوگ گھر پر فارغ ہوتے ہیں اور ڈیپریشن کا شکار ہوتے ہیں یا پھر اپنے پیاروں کی عدم توجہی انہیں ماردیتی ہے مگر حیرت انگیز طور پر یہ بات سامنے آئی کہ بغیر کسی حادثے کے طبعی موت مرنے والوں کی تعداد بھی یکم جنوری کو سب سے زیادہ ہے-
یونیورسٹی آف کیلی فورنیا کے زیر اہتمام ہونے والی تحقیق کے دوران معلوم ہوا کہ یکم جنوری کو طبعی موت مرنے کے امکانات پانچ فیصد بڑھ جاتے ہیں-ایسا کیوں ہے اور یکم جنوری کو زیادہ اموات کیوں ہوتی ہیں ،سائنسدان اس بارے میں کچھ کہنے سے قاصر ہیں اور اسے قدرت کے سربستہ رازوں میں سے ایک راز سمجھا جا رہا ہے-

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*