outline
Chairman of Pakistan Peoples Party, Bilawal Bhutto Zardari addresses supporters in front of a poster of slain prime minister Benazir Bhutto at a rally in Karachi on November 30, 2013. Bilawal Bhutto Zardari, the novice head of slain prime minister Benazir Bhutto's party lashed out at the Nawaz Sharif government for its privatisation plans and vowed to resist it.   AFP PHOTO/Rizwan TABASSUM        (Photo credit should read RIZWAN TABASSUM/AFP/Getty Images)

نواز شریف عدلیہ اور پارلیمنٹ میں محاذ آرائی چاہتے ہیں:بلاول

لاہور(آؤٹ لائن ڈیسک) پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ نوازشریف پروپیگنڈے کے استاد رہے ہیں وہ عدلیہ اور پارلیمنٹ میں محاذ آرائی چاہتے ہیں۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ نوازشریف کو احتساب کی عادت نہیں، انہیں پاناما کا نہیں بلکہ 30 سال کا حساب دینا ہے، نوازشریف ڈرامے بازی میں ماہر ہیں، انہوں نے ہائی جیکنگ اور سپریم کورٹ پر بھی حملہ کرکے ڈرامے بازی کی، نوازشریف کیا سمجھتے ہیں کہ عوام بے وقوف ہیں۔

چیئرمین پی پی کا کہنا تھا کہ ہم نے پچھلے چار سال دیکھا، جب نوازشریف وزیراعظم تھے تو اس وقت ووٹ اور پارلیمنٹ کی کیا حیثیت رکھی، اب وہ پارلیمنٹ کی بات کررہے ہیں لیکن عوام سب جانتے ہیں، عوام انہیں الیکشن میں بھرپور شکست دیں گے، انہیں عدالتوں اور عوام کی طرف سے بھی سزا ملے گی۔

بلاول بھٹو نے مزید کہا کہ نوازشریف پروپیگنڈے کے استاد رہے ہیں، وہ عدلیہ اور پارلیمنٹ میں محاذ آرائی چاہتے ہیں، وہ چاہتے ہیں آئینی بحران اور سسٹم میں گڑبڑ ہو لیکن ہم پر امید ہیں کہ نظام میں کوئی مسئلہ نہیں ہوگا۔
ان کا کہنا تھا کہ نوازشریف کو واپس لانے کی کیا وجہ تھی، سپریم کورٹ کے فیصلے کو ماننا ہوگا، نوازشریف نے یوسف رضا گیلانی کو مشورہ دیا تھا کہ عدالت کا فیصلہ مانیں اور استعفیٰ دے کر گھر بیٹھیں، اب نوازشریف کو اپنے مشورے کا پاس رکھنا چاہیے۔

چیئرمین پی پی نے کہا کہ احتساب ہوگا اور پانچ سال کا جواب دینا پڑے گا، نوازشریف کے ساتھ مشرف کو بھی جواب دہ ہونا چاہیے، سب کے لیے ایک قانون ہونا چاہیے، عدلیہ پر اسٹیمپ لگے گی، صرف سیاستدانوں کے خلاف فیصلے کرسکتے ہو اور مشرف کو باہر بھیج سکتے ہو۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

آپکا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا

*